اہم خبردنیا

علاقائی دہشتگردی روکنے کیلئے پاکستان کیساتھ مل کر کام کریں گے: امریکا نے بیان جاری کردیا

علاقائی دہشتگردی روکنے کیلئے پاکستان کیساتھ مل کر کام کریں گے: امریکا نے بیان جاری کردیا

واشنگٹن: امریکا نے کہا ہے کہ ٹی ٹی پی پر فضائی حملوں کا تعلق پاکستان کے آزادانہ فیصلوں سے ہے، پاکستان ملکی سلامتی کے مسائل کیسے حل کرتا ہے یہ ان کا فیصلہ ہے۔وائٹ ہاؤس میں پریس بریفنگ کے دوران امریکی محکمہ خارجہ کے ترجمان میتھیو ملر نے کہا ہے کہ پاکستانی عوام نے دہشت گردوں کے ہاتھوں بہت نقصان اٹھایا ہے، وہ طالبان کی حمایت کرتے ہیں، امریکا کسی قسم کی فنڈنگ ​​نہیں کرتا۔ طالبان
میتھیو ملر نے مزید کہا کہ اقوام متحدہ نے افغانستان میں خواتین کے ساتھ بدسلوکی اور افغانستان میں نام نہاد اخلاقی نگرانی پر رپورٹ جاری کی ہے۔ ہےانہوں نے کہا کہ افغان عوام کے ساتھ طالبان کے سلوک بالخصوص خواتین کے ساتھ سلوک پر کڑی نظر رکھی جاتی ہے۔ توقع ہے کہ طالبان افغان عوام اور عالمی برادری کو اپنی یقین دہانیوں کا احترام کریں گے۔ بین الاقوامی برادری کے ساتھ طالبان کے تعلقات ان کے اقدامات پر منحصر ہیں۔ ہےترجمان امریکی محکمہ خارجہ نے کہا ہے کہ علاقائی سلامتی کو لاحق خطرات سے نمٹنے میں پاکستان اور امریکا کا مشترکہ مفاد ہے، پاکستان کی فوجی صلاحیتوں میں اضافے کے لیے باقاعدہ بات چیت جاری ہے، ہم دنیا بھر کے صحافیوں کے کام کی حمایت کرتے ہیں۔دوسری جانب امریکی دفاعی ادارے پینٹاگون کے ترجمان میجر جنرل پیٹرک رائیڈر نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ ٹی ٹی پی پر فضائی حملوں کا تعلق پاکستان کے آزادانہ فیصلوں سے ہے، پاکستان قومی سلامتی کے مسائل کیسے حل کرتا ہے یہ اس کا اپنا فیصلہ ہے۔ .ان کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان کے اندرونی فیصلوں پر بات نہیں کریں گے، پاکستان کے ساتھ ہمارے دیرینہ تعلقات ہیں اور سیکیورٹی تعاون کا رشتہ ہے۔ ہم علاقائی دہشت گردی کی روک تھام کے لیے پاکستان کے ساتھ مل کر کام کریں گے۔ کروں گا۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button