اہم خبرتازہ ترین

یہ تو پھر ہونا ہی تھا چاروں صوبوں نے زرعی انکم ٹیکس پر آئی ایم ایف کا مطالبہ مان لیا

یہ تو پھر ہونا ہی تھا چاروں صوبوں نے زرعی انکم ٹیکس پر آئی ایم ایف کا مطالبہ مان لیا

اور بین الاقوامی معیارات کے مطابق۔ دنیا کے کسی بھی ملک میں ہمارے نوجوان مرد و خواتین اپنا بہترین مستقبل بنا سکتے ہیں، اس سے بے روزگاری جیسے چیلنجز پر قابو پانے میں مدد ملے گی۔
ٹیوٹا آزاد جموں و کشمیر اس تربیتی عمل میں قومی سطح کے معروف اداروں اور تنظیموں کے ساتھ مکمل شراکت داری اور مالی و تکنیکی معاونت فراہم کر رہا ہے۔ ضرورت اس بات کی ہے کہ ہمارے نوجوان اس عمل سے مستفید ہوں۔ تربیت یافتہ افراد کے لیے تربیتی رہائش۔ اور ٹیوٹا آزاد جموں و کشمیر کی طرف سے کھانے سمیت دیگر ضروری اور بنیادی سہولیات مفت فراہم کی جا رہی ہیں۔ذرائع کا کہنا ہے کہ چاروں صوبائی حکومتیں 12 جولائی تک پلان جمع کرائیں گی، 6 لاکھ سے زائد سالانہ آمدن پر زرعی آمدنی پر انکم ٹیکس کی شرح عائد کی جائے گی۔ذرائع کا کہنا ہے کہ زرعی آمدنی پر انکم ٹیکس کی شرح بھی نارمل انکم ٹیکس کے حساب سے لگائی جائے گی، زرعی آمدن پر وفاق اور صوبے ایک صفحے پر ہوں گے۔صوبوں نے زرعی آمدنی پر انٹرنیشنل مانیٹری فنڈ کو مکمل تعاون کی یقین دہانی کرائی، خیبرپختونخوا حکومت نے بھی انٹرنیشنل مانیٹری فنڈ سے مثبت بات چیت کی۔بین الاقوامی مالیاتی فنڈ نے خیبرپختونخوا کے 100 ارب روپے کے اضافی بجٹ کو سراہا۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button